کلمات قصار

کلمات قصار 11 سے 20 تک

۱۱) لوگوں میں بہت درماندہ وہ ہے جو اپنی عمر میں کچھ بھائی اپنے لیے نہ حاصل کرسکے ،اور اس سے بھی زیادہ درماندہ وہ ہے جو پاکر اسے کھو دے ۔

۱۲) جب تمہیں تھوڑی بہت نعمتیں حاصل ہوں تو ناشکری سے انہیں اپنے تک پہنچنے سے پہلے بھگا نہ دو ۔

۱۳)جسے قریبی چھوڑ دیں اسے بیگانے مل جائیں گے ۔

۱۴) ہر فتنہ میں پڑ جانے والا قابل عتاب نہیں ہوتا ۔

۱۵) سب معا ملے تقدیر کے آگے سر نگوں ہیں۔ یہاں تک کہ کبھی تدبیر کے نتیجہ میں موت ہوجاتی ہے

۱۶) پیغمبر صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی حدیث کے متعلق کہ’’ بڑھاپے کو (خضاب کے ذریعہ)بدل دو، اور یہود سے مشابہت اختیار نہ کرو ‘‘۔آپ علیہ السّلام سے سوال کیاگیا ،تو آپ علیہ السّلام نے فرمایا کہ پیغمبر صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے یہ اس موقع کے لیے فرمایا تھا جب کہ دین (والے) کم تھے ،اور اب جب کہ اس کا دامن پھیل چکا ہے ،اور سینہ ٹیک کر جم چکا ہے تو ہر شخص کو اختیار ہے ۔

۱۷)اُن لوگوں کے بارے میں کہ جو آپ کے ہمراہ ہوکر لڑنے سے کنارہ کش رہے ۔فرمایا :ان لوگوں نے حق کو چھوڑدیا اور باطل کی بھی نصرت نہیں کی ۔

۱۸) جو شخص امید کی راہ میں میں بگ ٹُٹ دوڑتا ہے وہ موت سے ٹھوکر کھاتا ہے ۔

۱۹) بامروت لوگو ں کی لغزشوں سے درگزر کرو ۔(کیونکہ )ان میں سے جو بھی لغزش کھا کر گرتا ہے تو اللہ اس کے ہاتھ میں ہاتھ دے کر اسے اوپر اٹھالیتا ہے ۔

۲۰) خوف کا نتیجہ ناکامی اور شرم کانتیجہ محرومی ہے اور فرصت کی گھڑیاں (تیزرو) ابر کی طرح گزر جاتی ہیں ۔لہٰذا بھلائی کے ملے ہوئے موقعوں کو غنیمت جانو۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

یہ بھی دیکھیں
Close
Back to top button