وَ احْذَرْ صَحَابَةَ مَنْ یَّفِیْلُ رَاْیُهٗ، وَ یُنْكَرُ عَمَلُهٗ فَاِنَّ الصَّاحِبَ مُعْتَبَرٌۢ بِصَاحِبِهٖ۔ (خط ۶۹)

اس آدمی کی صحبت سے بچو جس کی رائے کمزور اور افعال برے ہوں کیونکہ آدمی کا اس کے ساتھی پر قیاس کیا جاتا ہے۔

Avoid the company of the person whose opinion is unsound and whose action is detestable, because a man is judged by the company he keeps. (Letter 69)